بند کریں
شاعری جمال احسانی

اک قرض ہے اُتار رہے ہیں کسی طرح

-

ik qarz utar rahe hain kiss tarhaaN


(226) ووٹ وصول ہوئے