بند کریں
شاعری جاوید اختر

پھرتے ہیں کب سے دربدر اب اس نگر اب اس نگر اک دوسرے کے ہمسفر میں اور مری أوارگی

-

phirte-hain-kab-se-darbadar-abb-iss-nagar-

جاوید اختر

javed akhtar

(485) ووٹ وصول ہوئے