بند کریں
شاعری جوش ملیح آبادی

پھر بھی میں تجھ کو نہیں پہچانتا

-

phir bhi tujh ko na pehchana


(332) ووٹ وصول ہوئے