بند کریں
شاعری خالد علیم

کیا ضروری ہے وہ ہم رنگ نوا بھی ہو جائے

-

kiya zaroori hai wo hum rangnawa bhi ho jaye


(307) ووٹ وصول ہوئے