بند کریں
شاعری خالد شریف

کاش ایسا ہو کہ

-

kaash aisa ho keh


(288) ووٹ وصول ہوئے