بند کریں
شاعری خواجہ الطاف حسین حالی

تو نہیں ہوتا تو رہتا ہے اچاٹ

-

Tu nehin hota to


(334) ووٹ وصول ہوئے