بند کریں
شاعری خواجہ میر درددیوان درد

آرام سے کبھو بھی نہ یک بار سو گئے

-

Arram sey kabhi


(208) ووٹ وصول ہوئے