بند کریں
شاعری خواجہ میر درددیوان دردیونہی ٹھہری کہ ابھی جایئے گا

(358) ووٹ وصول ہوئے