بند کریں
شاعری خواجہ میر دردیاں عیش کے پردے میں چھپی دل شکنی ہے

(311) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان