بند کریں
شاعری مجید امجد

اور اب یہ کہتا ہوں یہ جرم تو روا رکھتا

-

aur ab yeh kehta hoon , yeh juram tu rawa rakhta


(282) ووٹ وصول ہوئے