بند کریں
شاعری محبوب صابرگھر میں رہتا نہیں عذاب ہے دل

(134) ووٹ وصول ہوئے