بند کریں
شاعری میر تقی میردیوان میرگرچہ کب دیکھتے ہو پر دیکھو

(106) ووٹ وصول ہوئے