بند کریں
شاعری میر تقی میردیوان میر

کیا کروں شرح خستہ جانی کی

-

kiya karooN sharah khasta jani ki


(123) ووٹ وصول ہوئے