بند کریں
شاعری میر تقی میر

کھینچتا ہے دلوں کو صحرا کچھ

-

khenchta hai dil ko sehra kuch


(111) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان