بند کریں
شاعری محسن احسان

سرِ افلاک ہے وہ اور تہہِ دریا وہ ہے

-

sar e aflak hai wo or teeh darya wo hai


(312) ووٹ وصول ہوئے