بند کریں
شاعری محسن نقویکبھی تو محیط حواس تھا سو نہیں رہا

(266) ووٹ وصول ہوئے