بند کریں
شاعری مبشر سعید

جو لوگ تھے ہمارے دل و جاں کہاں گئے

-

jo log thay hamaray dil o jaan kahan gay


(31) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان