بند کریں
شاعری مرتضیٰ برلاس

پیکرِ انساں میں ڈھل کر خاک نے کیا کیا کیا

-

peekar insaan main dhar kar khaak ne kiya kiya kiya


(373) ووٹ وصول ہوئے