بند کریں
شاعری مشفق خواجہنہ اب وہ خوش نظری ہے نہ خوش خیالی ہے

(202) ووٹ وصول ہوئے