بند کریں
شاعری ناصر کاظمی

ہوتی ہے تیرے نام سے وحشت کبھی کبھی

-

Hoti hai tere naam sey


(286) ووٹ وصول ہوئے