بند کریں
شاعری نوید‌رضا

ایک تو پوری کہانی بھی نہیں جانتا میں

-

aik tu poori kahani bhi nahi janta main


(251) ووٹ وصول ہوئے