بند کریں
شاعری نوید‌رضاجدا ہوئے تو جدائی میں یہ کمال بھی تھا

(341) ووٹ وصول ہوئے