بند کریں
شاعری نوید‌رضا

پرانے خواب کی تعبیر بنتی جاتی ہے

-

purane khawab ki tabeer banti jati hai


(411) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان