بند کریں
شاعری نوید‌رضاراہ چلتے ہوئے وہ یونہی دوبارہ مل جائے

(337) ووٹ وصول ہوئے