بند کریں
شاعری ناظم الدین خلش

جینے کب دیتا ہے ٹوٹے ہوئے پندار کاغم

-

jeene kab deta hai toote hue pidar ka gham


(260) ووٹ وصول ہوئے