بند کریں
شاعری نظیر اکبر آبادیکہیے کہاں تک ہمیں تم سے ہے جو جو غرض

(161) ووٹ وصول ہوئے