بند کریں
شاعری نوشی گیلانیوہ بے ارادہ سہی تتلیوں میں رہتا ہے

(521) ووٹ وصول ہوئے