بند کریں
شاعری قمر رضا شہزادہارا ہوا عشق

میں نے بھی تہمت تکفیر اٹھائی ہوئی ہے

-

main ne bhi tuhmaat e takfeer uthai hai


(378) ووٹ وصول ہوئے