بند کریں
شاعری قتیل شفائی

پریشاں رات ساری ہے ستارو تم تو سو جاو

-

pareshan sitaroo


(631) ووٹ وصول ہوئے