بند کریں
شاعری رخشندہ نویدپھیکا پھیکا مرے چہرے پہ وہی رنگ سا ہے

(95) ووٹ وصول ہوئے