بند کریں
شاعری رانا سعید دوشی

ہم کو دائم کہاں رہنا ہے چلے جانا ہے

-

hum ko daim kahan rehnahai chaley jana hai


(348) ووٹ وصول ہوئے