بند کریں
شاعری راشد مراد

درد کم کہاں ہوگا

-

dard kam kahan ho ga


(163) ووٹ وصول ہوئے