بند کریں
شاعری ریحانہ قمر

کوئی تہمت لگائے تو اذیت کم نہیں ہوتی

-

koi tuhmat lagay tu azziat kam nahi hoti

ریحانہ قمر

rehana qamar

(319) ووٹ وصول ہوئے