بند کریں
شاعری صبیحہ صبا

جھلسی ہوئی اک درد کی ماری ہوئی دنیا

-

jhulsi hui ik dard ki mari hui duniya


(349) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان