بند کریں
شاعری صبیحہ صبا

کبھی حیران ہوتی ہوں کبھی انجان ہوتی ہوں

-

kabhi heraan hoti hai kabhi anjaan hoti hai


(343) ووٹ وصول ہوئے