بند کریں
شاعری صابر ظفر

اگر خیال میں تشکیک اور تضاد نہ ہو

-

ager khayal main tashkeek or tazad na hoo


(324) ووٹ وصول ہوئے