بند کریں
شاعری سعید خان

کسی بھی سنگِ ملامت سے جی نہیں بھرتا

-

kissi bhi sang e malamat se jee nahi bharta


(293) ووٹ وصول ہوئے