بند کریں
شاعری سعید خان

سرِ بازار لٹ کر بھی دُہائی اب نہیں دیتے

-

sar e bazar lutt kar bhi duhai abb nahi deete


(298) ووٹ وصول ہوئے