بند کریں
شاعری سعید شارقمَیں جی رہا ہوں کہ ماتم بھی ہو چکا میرا؟

(37) ووٹ وصول ہوئے