بند کریں
شاعری ساغر صدیقی

دستور یہاں بھی گونگے ہیں

-

dastoor yahan bhi goongay hain farmaan yahan bhi andhay hain


(402) ووٹ وصول ہوئے