بند کریں
شاعری صائمہ کامران

مُدّت سے یہ میرے اندر بستی تھی

-

mudaat se yeh mere andar basti thi


(225) ووٹ وصول ہوئے