بند کریں
شاعری سلیم ساگر

باہر ہوا جاتا ہے اب امکان سے کیا کیا

-

bahar hua jat ahai ab imkaaN se kiya kiya


(254) ووٹ وصول ہوئے