بند کریں
شاعری ثمینہ راجہسر تا پا جمال ہو گئی ہوں

(301) ووٹ وصول ہوئے