بند کریں
شاعری ثنا ء اللہ ظہیر

اس امتحان سے خود کو گزارتے کب تک

-

iss imtehan se khud ko guzarte kab tak


(200) ووٹ وصول ہوئے