بند کریں
شاعری شبنم شکیلسب وا ہیں دریچے تو ہوا کیوں نہیں آتی

(276) ووٹ وصول ہوئے