بند کریں
شاعری شاہدزکی

رات سی نیند ہے مہتاب اتارا جائے

-

raat si neend hai mehtab utara jaye


(219) ووٹ وصول ہوئے