بند کریں
شاعری شاہدزکیسورج گرا‘ زمیں رُکی‘ مہتاب تھک گیا

(226) ووٹ وصول ہوئے