بند کریں
شاعری شکیب جلالی

وہ دوریوں کا رہ آب پر نشان کھلا

-

Who doorion ka


(393) ووٹ وصول ہوئے