بند کریں
شاعری شکیل بدیوانیاب تک وہی ہے

(203) ووٹ وصول ہوئے