بند کریں
شاعری شکیل بدیوانیدیوان بدایوانیافسردہ نہ ہو اے

(216) ووٹ وصول ہوئے